میں کافر ہوں اگر اسلام یہ ہے

علی گُل جی (علی احمد جان)

 مُلک ایک عجیب  خوفناک صورت حال سے دوچار ہے۔مہنگائی، دھماکے، ٹارگٹ کلنگ اور امریکہ کی دھمکیوں نے عوام کوذہنی مریض  بنا دیا ہے۔”شک“ نے یہاں  کے عوام کی ذہنوں میں مستقل سکونت اخیتار کر لی ہے۔ہر انسان دوسرے کو شک کی نِگاہ سے دیکھتا ہے کہ یہ خودکش بمبار ہے، یا کسی مولوی کانوازا گیا جنت کا سَند یافتہ  مسلمان جو دوسرے مسلمانوں کو قتل کر کے ’ثواب‘ کمانے میں مصروف ہیں۔  بقول شا عِر

 جانے کب کون مجھے مار دے کا فر کہہ کر

شہر کا شہر مسلمان بنا پھرتا ہے

اِنتہاپسندی کی یہ  آگ ہمارے اقتدار کے بھوکے سیاستدانوں کی لگائی ہوئی ہے جو اپنے اقتدار کو طول دینے کے لیے سب کچھ کرنے کو تیار رہتے ہیں اور میں حوروں کا جلوہ دیکھنے کے لیے بے چین بمبار ہمارے حکمران اور انکل سام کی مشترکہ پیداوار ہیں۔کراچی میں جاری ٹارگٹ کلنگ کا ”ٹیسٹ میچ“ جو بظاہر دو سیاسی جماعتوں کے درمیان کھیلا جاتا ہے، جونہی رُک گیا تو کویٹہ کی وادی  بے قصور زائرین کے لہو سے لال ہو گئی۔ یوں خون کی یہ ہولی ہنوز جاری ہے۔گزشتہ کچھ سالوں سے فرقہ پرستی کا زہر پاکستانی قوم میں سرایت کر چکا ہے۔ایک مسلمان دوسرے کلمہ گو مسلمان کو قتل کر کے خود کو جنّت کا حق دار کہلوانے پربضد ہے۔ کچھ مدرسوں اور دوسرے “درسگاہوں” میں  ذہنی تربیت(برین واش) کچھ اس طرح دی جاتی ہے کہ دوسرے فرقے اور مسلک کے پیروکاروں کو قتل کرنے کی نت نئی دلیلیں پیش کی جاتی ہیں۔ مولوی حضرات اِن معصوم ذہنوں میں نفرت کا زہر بھر دیتے ہیں اور قرآن شریف کی اصل تعلیم کے بر عکس اُنھیں فرقہ واریت کے دلدل میں دھکیل دیتے ہیں۔

قرآن کریم میں واضح طور پر فرقہ واریت کی لعنت سے دور رہنے کا حکم دیا ہے۔حکم ِ خدا وندی ہے کہ:۔

ترجمہ: ”اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھامے رکھو اور تفرقہ میں نہ پڑو“

اس واضح فرمانِ الٰہی کے باوجود کچھ لوگ اس لعنت کو فروغ دینے میں مصروف ہیں ۔ یہ کہاں کی دانش مندی ہے کہ مسلمان مسلمان کا گلا کاٹ دے۔گزشتہ ہفتے ایران جانے والے شیعہ زائرین پر گولیاں برسا کر شہیدکرنا بھی اسی سلسلے کی اک کڑی ہے۔کیا اسلام اس عمل دیتا ہے؟ایسے ہی لوگوںکی وجہ سے آج عالمِاسلام اور خصوصاً پاکستانی مسلمانوں کے سر شرم سے جھک گئے ہیں۔آج پاکستان اور پوری اُمتِ مسلمہ ایسے نام نہاد مسلمانوں کی وجہ سے پوری دنیا میں بدنام ہے۔فرقہ وارانہ دہشت گردی کی لہر نے پوری دنیا کو ہم سے دور کر دیا ہے۔

مذہبی فرقوں کے سربراہان ایک دوسرے پر لفظوں کے ایٹم بم گرانے میں مصروف ہیں۔ہر فرقے کے پاس دوسرے کے لیے کُفر کا فتویٰ موجود ہے۔کوئی ”یارسول اللہ“ کہنے والے کو کافر کہتا ہے تو کوئی ہاتھ کھول کر نماز پڑھنے والوں کو کفر کا فتویٰ دیتا ہے۔کچھ لوگ موچھیں منڈوانے والوں کو دائرئہ اسلام سے خارج کر دیتے ہیں تو دوسرے لمبی داڈھی رکھنے والوں کے خلاف زہر اُگلتے ہیں۔خود غرضی کی اِنتہا ےہ ہے کہ قرآن پاک کی اےتوں اور احادےث کو بھی نہےں بخشا ہے،جنہےں اپنے مقصد اور مطلب کے لئے اِستعمال کرتے ہےں۔آ ج ہم اصل اسلام سے کوسوُںدُور نکل آئے ہےں۔آ ج اسلامی معشےت، اسلامی فِقہ ،اسلامی ثقافت سب بدل گئے ہےں۔ ہم حضور کی دیں سے اتنی دُور نکل آئے ہیں کہ ہمارے اعمال دَورِجہالت سے مماثلت رکھتے ہےں۔

 آج پوری دنیا میں  مےں مسلمانوں کی زبوں حالی کا سبب اسلام میں کی جانے والی مِلاوٹ ہے،جِسے اپنے مقصد کے لئے کی گئی ہے۔ شائد ےہی ”خود ساختہ اسلام“ ان کو قتل و غارت کی تعلےم دےتا ہے ورنہ اسلام نے ایک انسان کے قتل کو پوری انسانیت کی قتل کا مترادِف قرار دیا ہے۔ مذہبی فرقوں کے سربراہان کو چاہئے کہ وہ صرف ما ضی کی عا لی شان تاریخ و واقِعات کو خطبوں میں دُہرانے کے بجائے اس پہ عمل بھی کریں  اور فرقہ واریت کے ذہر کو معاشرے سے نکال پھینکنے میں اپنا کردار ادا کریں۔ تاکہ مستقبِل مےں اےسے درد ناک واقعات رونما نہ ہو۔


3 Responses to میں کافر ہوں اگر اسلام یہ ہے

  1. hasan says:

    Until and unless the factories of so called Taliban branded Jihad (Madaris) and Outfit/ banned organizations as well as their activities are not stopped, the menace of extremism and terrorism will continue without any pause.

  2. salman says:

    awesome ……………. میں کافر ہوں اگر اسلام یہ ہے

  3. Hakim says:

    “The fire of extremism has been ignited by greedy politicians to extend their rule” Amazing. Why not talk about so called “strategic depth” for which these extremist elements have been nurtured by establishment to make them able to gain space in politics. And this policy has brought this country at the verge of destruction.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s